Play Copy

ﮯﮰﮱﯓﯔﯕﯖﯗﯘﯙﯚﯛﯜﯝﯞﯟﯠﯡﯢﯣﯤﯥﯦﯧﯨﯩﯪﯫﯬﯭﯮﯯﯰﯱﯲﯳﯴﯵﯶﯷﯸﯹﯺﯻﯼ

143. اور جب موسٰی (علیہ السلام) ہمارے (مقرر کردہ) وقت پر حاضر ہوا اور اس کے رب نے اس سے کلام فرمایا تو (کلامِ ربانی کی لذت پا کر دیدار کا آرزو مند ہوا اور) عرض کرنے لگا: اے رب! مجھے (اپنا جلوہ) دکھا کہ میں تیرا دیدار کرلوں، ارشاد ہوا: تم مجھے (براہِ راست) ہرگز دیکھ نہ سکوگے مگر پہاڑ کی طرف نگاہ کرو پس اگر وہ اپنی جگہ ٹھہرا رہا تو عنقریب تم میرا جلوہ کرلوگے۔ پھر جب اس کے رب نے پہاڑ پر (اپنے حسن کا) جلوہ فرمایا تو (شدّتِ اَنوار سے) اسے ریزہ ریزہ کر دیا اور موسٰی (علیہ السلام) بے ہوش ہو کر گر پڑا۔ پھر جب اسے افاقہ ہوا تو عرض کیا: تیری ذات پاک ہے میں تیری بارگاہ میں توبہ کرتا ہوں اور میں سب سے پہلا ایمان لانے والا ہوںo

143. And when Musa (Moses) came at the time (set) by Us and his Lord spoke to him, he (ardently aspired to behold Him out of the pleasure of hearing Allah’s Word and) submitted: ‘O Lord, show me (Your Beauty) so that I may savour Your Sight.’ Allah said: ‘By no means can you look upon Me (directly), but look towards the mountain. So if it stays firm in its place, then soon will you behold My beauty.’ When his Lord unveiled the Light (of His divine beauty) on to the mountain, (He) crushed it into sand particles (with the intense divine radiance) and Musa (Moses) fell down unconscious. Then when he recovered, he submitted: ‘Holy You are and I turn to You in repentance and I am the first of those who believe.’

(الْأَعْرَاف، 7 : 143)