Play Copy

ﮎﮏﮐﮑﮒﮓﮔﮕﮖﮗﮘﮙﮚﮛﮜﮝﮞﮟﮠﮡﮢﮣﮤﮥ

87. اور ذوالنون (مچھلی کے پیٹ والے نبی علیہ السلام کو بھی یاد فرمائیے) جب وہ (اپنی قوم پر) غضبناک ہو کر چل دیئے پس انہوں نے یہ خیال کر لیا کہ ہم ان پر (اس سفر میں) کوئی تنگی نہیں کریں گے پھر انہوں نے (دریا، رات اور مچھلی کے پیٹ کی تہہ در تہہ) تاریکیوں میں (پھنس کر) پکارا کہ تیرے سوا کوئی معبود نہیں تیری ذات پاک ہے، بیشک میں ہی (اپنی جان پر) زیادتی کرنے والوں میں سے تھاo

87. And (also remember) Dhu al-Nun (the Prophet whom the fish swallowed) when he went away enraged (at his people). So he thought that We would not cause him any distress (during that journey). Then he cried out (entangled) in (the layers of) the darkness (of night, under the sea and in the fish belly): ‘There is no God except You. Glory be to You! Surely, I was of those who wrong (their souls).’

(الْأَنْبِيَآء، 21 : 87)