Play Copy

ﭑﭒﭓﭔﭕﭖﭗﭘﭙﭚﭛﭜﭝﭞﭟﭠﭡﭢﭣﭤﭥﭦﭧﭨﭩﭪﭫﭬﭭﭮﭯﭰﭱﭲﭳﭴﭵﭶﭷﭸﭹﭺﭻﭼﭽﭾﭿﮀﮁﮂﮃﮄﮅﮆﮇﮈﮉﮊﮋﮌﮍﮎﮏﮐﮑﮒﮓﮔﮕﮖﮗﮘﮙﮚﮛﮜﮝﮞﮟﮠﮡﮢﮣ

102. مزید برآں وہ (یہود) اُس جھوٹ کی بھی پیروی کرتے تھے جسے شیاطین نے سلیمان (علیہ السلام) کی سلطنت کے حوالے سے گھڑ لیا تھا۔ حالانکہ سلیمان (علیہ السلام) نے (کوئی) کفر نہیں کیاتھا بلکہ کفر تو شیطانوں نے کیا جو لوگوں کو جادو سکھاتے تھے اور وہ اس (جادو کے علم) کے پیچھے (بھی) لگ گئے جو شہر بابل میں ہاروت اور ماروت (نامی) دو فرشتوں پر اتارا گیا تھا۔ وہ دونوں کسی کو کچھ نہ سکھاتے تھے یہاں تک کہ کہہ دیتے کہ ہم تو محض آزمائش (کے لیے) ہیں سو تم (اس پر اعتقاد رکھ کر) کافر نہ بنو۔ اس کے باوجود وہ (یہودی) ان دونوں سے ایسا (منتر) سیکھتے تھے جس کے ذریعے شوہر اور اس کی بیوی کے درمیان جدائی ڈال دیتے، حالاں کہ وہ اس کے ذریعے کسی کو بھی نقصان نہیں پہنچا سکتے تھے مگر اللہ ہی کے حکم سے۔ اور یہ لوگ ان سے وہی چیزیں سیکھتے جو ان کے لیے ضرر رساں ہوتیں اور انہیں نفع نہ پہنچاتیں۔ اور انہیں (یہ بھی) یقینا معلوم تھا کہ جو کوئی اس (کفر یا جادو ٹونے) کا خریدار بنا اس کے لیے آخرت میں کوئی حصہ نہیں (ہوگا)۔ اور وہ بہت ہی بری چیز ہے جس کے بدلے میں انہوں نے اپنی جانوں (کی حقیقی بہتری یعنی اُخروی فلاح) کو بیچ ڈالا۔ کاش! وہ اس (سودے کی حقیقت) کو جانتےo

102. Moreover, they follow what the devils fabricated about the kingdom of Sulayman (Solomon). Not that Sulayman (Solomon) himself was faithless, but it was the devils who were faithless. They used to teach the people black magic and what was sent down upon the two angels named Harut and Marut in Babylon. Still, these two never taught anyone without first warning him, ‘We are only a temptation (to test you); do not renounce your faith (by putting trust in black magic).’ However, they learnt (the black magic) from both of them by which they could cause separation between husband and wife, although they harm no one with it except by Allah’s Leave. They learn what harms them and does not profit them, though they certainly know that anyone who buys it has no share in the Hereafter. Most evil is that for which they sold their souls. Had they known (this)!

(الْبَقَرَة، 2 : 102)