Play Copy

ﭑﭒﭓﭔﭕﭖﭗﭘﭙﭚﭛﭜﭝﭞﭟﭠﭡﭢﭣﭤﭥﭦﭧﭨﭩﭪﭫﭬﭭﭮﭯﭰﭱﭲﭳﭴﭵﭶﭷﭸﭹﭺﭻ

62. ایمان والے تو وہی لوگ ہیں جو اللہ پر اور اس کے رسول (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) پر ایمان لے آئے ہیں اور جب وہ آپ کے ساتھ کسی ایسے (اجتماعی) کام پر حاضر ہوں جو (لوگوں کو) یکجا کرنے والا ہو تو وہاں سے چلے نہ جا ئیں (یعنی امت میں اجتماعیت اور وحدت پیدا کرنے کے عمل میں دل جمعی سے شریک ہوں) جب تک کہ وہ (کسی خاص عذر کے باعث) آپ سے اجازت نہ لے لیں، (اے رسولِ معظّم!) بیشک جو لوگ (آپ ہی کو حاکم اور مَرجَع سمجھ کر) آپ سے اجازت طلب کرتے ہیں وہی لوگ اللہ اور اس کے رسول (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) پر ایمان رکھنے والے ہیں، پھر جب وہ آپ سے اپنے کسی کام کے لئے (جانے کی) اجازت چاہیں تو آپ (حاکم و مختار ہیں) ان میں سے جسے چاہیں اجازت مرحمت فرما دیں اور ان کے لئے (اپنی مجلس سے اجازت لے کر جانے پر بھی) اللہ سے بخشش مانگیں (کہ کہیں اتنی بات پر بھی گرفت نہ ہو جائے)، بیشک اللہ بڑا بخشنے والا نہایت مہربان ہےo

62. The believers are only those who have believed in Allah and His Messenger (blessings and peace be upon him), and when they are with you for some (collective) issue which brings (the people) together, then they should not go away from there (i.e., they should participate whole-heartedly to work for collective coherence and unity amongst the Umma [Community]) until they have obtained permission from you (owing to some special excuse. O Esteemed Prophet,) surely those who seek permission from you (believing your Majesty the Supreme and Ultimate Authority), it is they who are the believers in Allah and His Prophet. So when they seek from you permission (to go) for some affair of theirs, then (you are the Supreme Sovereign Authority). Grant leave whom you please, and ask forgiveness for them from Allah (even on going away from your company by obtaining your permission, lest they should be seized even on that). Surely, Allah is Most Forgiving, Ever-Merciful.

(النُّوْر، 24 : 62)